جن دنوں حضرت عثمان رضی اللہ عنہ اپنےگھرمیں محصورتھے

جن دنوں حضرت عثمان رضی اللہ عنہ اپنےگھرمیں محصورتھے

بی کیو نیوز! حضرت ابولیلیٰ کندیؒ کہتے ہیں جن دنوں عثمانؓ اپنے گھر میں محصور تھے میں بھی ان دنوں وہاں ہی تھا۔ ایک دن حضرت عثمانؓ نے دریچہ سے باہر جھانک کر (باغیوں سے) فرمایا: اے لوگوں! مجھے ق-ت-ل نہ کرو (مجھ سے کوئی غلطی ہو گئی ہو تو) مجھ سے تو-بہ کروا لو۔ اللہ کی قسم! اگرتم مجھے ق-ت-ل کرو گے تو پھر کبھی بھی تم اکٹھے نہ نماز پڑھ سکو گے اور نہ دش-من سے جہ-اد کر سکو گے اور تم لوگوں میں اختلاف پیدا ہو جائے گا۔

اور پھر دونوں ہاتھوں کی انگلیاں ایک دوسرے میں داخل کرکے فرمایا تمہارا حال بھی ایسا ہو جائے گا۔ پھر یہ آیت پڑھی: ترجمہ:’’اے میری قوم! میری ضد تمہارے لیے اس کا باعث نہ ہو جائے کہ تم پر بھی اسی طرح کی مصیبتیں آ پڑیں جیسی قوم نو-ح یاقوم ہو-د یاقوم صا-لح پر پڑی تھیں اور قومِ لو-ط تو (ابھی) تم سے (بہت) دور (زمانہ میں) نہیں ہوئی۔‘‘ (سورۃ ھو-د، آیت 89) حضرت عثمانؓ نے حضرت عبداللہ بن سلامؓ کے پاس آدمی بھیج کر پوچھا کہ آپ کی کیا رائے ہے؟ انہوں نے جواب دیا آپ اپنا ہاتھ (ان باغیوں سے) روک کر رکھیں۔ اس سے آپ کی دلیل زیادہ مضبوط ہو گی (قی-امت کے دن). اور پھر دونوں ہاتھوں کی انگلیاں ایک دوسرے میں داخل کرکے فرمایا تمہارا حال بھی ایسا ہو جائے گا۔ پھر یہ آیت پڑھی: ترجمہ:’’اے میری قوم! میری ضد تمہارے لیے اس کا باعث نہ ہو جائے کہ تم پر بھی اسی طرح کی مصیبتیں آ پڑیں جیسی قوم نو-ح یاقوم ہو-د یاقوم صا-لح پر پڑی تھیں اور قومِ لو-ط تو (ابھی) تم سے (بہت) دور (زمانہ میں) نہیں ہوئی۔‘‘ (سورۃ ھو-د، آیت 89) حضرت عثمانؓ نے حضرت عبداللہ بن سلامؓ کے پاس آدمی بھیج کر پوچھا کہ آپ کی کیا رائے ہے؟ انہوں نے جواب دیا آپ اپنا ہاتھ (ان باغیوں سے) روک کر رکھیں۔ اس سے آپ کی دلیل زیادہ مضبوط ہو گی (قی-امت کے دن).

Leave a Comment