Blasphemy against Prophet (P.B.U.H), a crime punishable with death

This post contains Urdu and English.

گستاخِ رسول واجب القتل ہے:

اُمت کا اجماع ہے کہ جو شخص نبی کریم ﷺ کی بارگاہ میں گستاخی کرے یا آپ کی ذاتِ اقدس کو کسی قسم کا عیب لگاۓ یا نقص تلاش کرے یا عوارض بشری جو آپ کے لیۓ جائز تھے۔ ان کی وجہ سے آپ کی تحقیر کرے یا آپ کی شان گھٹانے کی کوشش کرے وہ کافر ہے اور واجب القتل ہےاور جو اس کے کفر میں شک کرے وہ بھی کافر ہے۔ ایسا ذومعنی لفظ کہنا بھی گستاخی کا ہو خواہ وہ لفظ توہین کی نیّت سے نہ کہا جاۓ۔

ارشادِ باری تعالٰی ہے:
”اے ایمان والو! ”راعنا“ نہ کہو بلکہ ”انظرنا“ کہو اور غور سے سنا کرو اور کافروں کے لیۓ دردناک عزاب ہے“۔(البقرۃ:104)
حضرت ابوبکرصدیق کا دور:
حضرت ابوبکرصدیق نے قانون بنایا تھا کہ بدری(جن صحابہ کرام نے غزوہ بدر میں شرکت کی تھی) کسی جنگ میں شرکت نہیں کریں گے، کیونکہ یہ ھمارے پاس تبرکات ہیں۔ جب گستاخیِ رسول کی گئی تو پھر حضرت ابوبکرصدیق نے اپنا بنایا ہوا قانون توڑا اور کہا کہ ختمِ نبوت تو بہت حساس اور بڑا مسئلہ ہے۔ بدری صحابہ کو تو عزت ملی ہے حضور کے صدقے، اب حضور کی ناموس اور ختمِ نبوت کا مسئلہ ہے، چاہے بدری ہووے یا غیر بدری، سب یمامہ پہنچو،
قاری بھی چلے گۓ۔ حافظ بھی چلے گۓ۔ جوان بھی چلے گۓ۔ بوڑھے بھی چلے گۓ۔ عشرہ مبشرہ بھی چلے گۓ۔
صحابہ کرام فرماتے ہیں کہ نہ ہم نے پہلے کبھی ایسی جنگ لڑی اور نہ کبھی سنی۔ یہ جنگ 
اتنی بڑی تھی کہ اس میں 1200 نامور صحابہ کرام شہید ہوۓ تھے۔
 
The devout messenger is obligatory:
The Prophet (peace and blessings of Allah be upon him) said, “Whoever is a stranger in the sight of Prophet (SAW), or if he or she is able to find something wrong or find an error, or the poor who were entitled to you.” It is an infidel and it is obligatory for you to sacrifice or try to shout you, and it is obligatory for him and whoever doubts in his disbelief is also an infidel. It is also worthless to say such a mental word, but not with the intention of being insulted.
The meaning is:
“O believers! Do not say “Sayyidah” ​​but say, “Listen and listen carefully and have painful sorrows for the infidels.” (Al-Baqara: 104)
Abu Bakr Siddique:
Abu Bakr Siddique made a law that Badr (the companions participated in Ghostah Badar) will not participate in any war, because it is the Tabarat with us. When the Prophet (peace be upon him) was sent, Abu Bakr broke the law made by him and said, “The Prophethood of Prophethood is very sensitive and a big problem.” The Prophet (peace and blessings of Allah be upon him) said, “The Messenger of Allah (peace and blessings of Allah be upon him) said:” O Messenger of Allah!
The readers will also go. Hafiz also will go. Young men will also go. Even old ones will go. Christian scholars also go on.
The companions say that neither we have ever fought nor heard it before. This war was so big that 1,200 unnamed companions were martyred.

 

About Shahid Ghalvi