اللہ تعالی نے اپنے آپ کو قرآن میں 900 سے زیادہ مواقع پر “الربّ” کہا ہے

تمام خوبیاں اور کمالات اللہ تعالٰی کی ذات میں موجود ہیں

بی کیونیوز! اللہ تعالی نے اپنے آپ کو قرآن میں 900 سے زیادہ مواقع پر “الربّ” کہا ہے۔ رب صرف وہی ہے جو پوری تخلیق کا خیال رکھتا ہے وہ وہی ہے جس نے ہمیں پیدا کیا۔ جو ہمیں برقرار رکھتا ہے۔ جو روزِ اوّل سے تمام مخلوقات کو خدمتِ خلق کے کاموں کا سبق دیتا ہے جس میں تین اہم معنی ہیں پہلا اہم معنی رب، مالک، یا مالک بننا ہے۔ دوسرا اہم معنی یہ ہے

کہ دیکھ بھال، فروغ، برقرار رکھنے، اور فراہم کرنے کے لۓ اور تیسرا بلند یا بلند کرنا ہے۔

Leave a Comment