پاکستانیوں کے اربوں روپے ڈوبنے کا خدشہ، 51 سرمایہ کاری کرنیوالی کمپنیوں کوغیر قانونی قرار دیدیا گیا

(بی کیو میڈیا) ملک بھر میں پرکشش منافع دینے کے عوض شہریوں سے اربوں روپے کی سرمایہ کاری کرنے والی 51 کمپنیوں کو غیرقانونی قراردے دیا ہے سیکورٹی اینڈ ایکسچینج کمپنی آف پاکستان نے پشاور کے 4 کمپنیوں کی تفصیلات بھی جاری کردی ہے ان کمپنیوں کی تفصیلات خیبرپختونخوا حکومت کوبھی ارسال کردی ہے
مذکورہ کمپنیوں کے حوالے سے نہ صرف شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ ان میں سرمایہ کاری نہ کریں۔ مذکورہ 51 کمپنیوں میں پشاور ،کراچی، اسلام آباد، لاہور کی کئی معروف گروپ اور کمپنیاں شامل ہیں۔ دو ہفتے قبل صوبائی دارالحکومت پشاور میں کام کرنے والی ایک کمپنی نے شہریوں سے آن لائن سرمایہ کاری کے نام پرساڑھے پانچ ارب روپے بٹورکر منظر عام سے غائب ہو گئی۔ اس حوالے سے متاثرین کی طرف سے ایف آئی اے سے بھی رابطہ کیاہے۔ جس پر سیکورٹی ایکسچنیج کمپنی آف پاکستان کی جانب سے 51 کمپنیوں کو مشکوک قراردیا ہے۔ ایف بی آر اوردیگر اداروں میں خود کو رجسٹرڈ اور لائسنس یافتہ ظاہر کرکے پرکشش منافع پر لیزنگ، فنانس، مارکیٹنگ، ملٹی لیول مارکیٹنگ، جعلی پوسٹروں کے ذریعے شہریوں سے بڑے پیمانے پر اپنے کاروبار میں سرمایہ کاری کر رہے ہیں۔ ان کمپنیوں میں بعض کمپنیاں جو کہ شہریوں کو پرکشش منافع پر سرمایہ کاری کی پیشکش کر رہی ہے مذکورہ کمپنیوں کو شہریوں سے لین دین قوانین کے تحت غیر قانونی قرار دیا گیاہے جن میں پشاور کی چار بڑی کمپنیاں بھی شامل ہیں ذرائع کے مطابق ان کمپنیوں میں اکثر مختلف قسم کے کاروبار بشمول آئل، پولٹری فارم، بروکر یج، سٹاک مارکیٹ میں سرمایہ کاری، آن لائن بٹ کوائنز کرنسی میں سرمایہ کاری سمیت دیگرنوعیت کے کاروبار پر سرمایہ کاری پر حیرت انگیز اورپرکشش 10 سے 20 فیصد منافع کا لالچ دیکر شہریوں کو گھربیٹھے رقم کا کہہ کر اربوں روپے بٹور رہے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں