اگرکسی کو وہم کی بیماری ہو تو روزانہ ایک ہزار مرتبہ یَااَللّٰہُ پڑھے، انشاءاللہ اس کے دل سے تمام شکوک وشبہات دور ہو جائیں گے

اگرکسی کو وہم کی بیماری ہو تو روزانہ ایک ہزار مرتبہ یَااَللّٰہُ پڑھے، انشاءاللہ اس کے دل سے تمام شکوک وشبہات دور ہو جائیں گے

بی کیونیوز! اگرکسی کو وہم کی بیماری ہو تو روزانہ ایک ہزار مرتبہ یَااَللّٰہُ پڑھے، انشاءاللہ اس کے دل سے تمام شکوک وشبہات دور ہو جائیں گے اور عزم ویقین کی قوت نصیب ہوگی ۔جو لاعلاج مریض ہواور اس کے مرض سے اطباء عاجز آگئے ہوں وہ بکثرت یَا اَللّٰہُ کا ورد رکھے اور اس کے بعد شفاء کی دعامانگے۔ اس کوشفاء نصیب ہوگی بشر طیکہ موت کاوقت نہ آگیا ہو۔ جمعہ کے دن نماز جمعہ سے پہلے پاک وصاف ہوکر خلوت میں پڑھنے سے مقصود آسان ہوجاتا ہے خواہ کیسا

ہی مشکل ہو۔ ہرنماز کے بعد سو بار پڑھنے والا صاحبِ باطن وصاحب کشف ہوجاتا ہے۔ چھیاسٹھ بار لکھ کر دھوکر مریض کوپلانے سے اللہ تعالی شفاء عطافرماتا ہے۔ خواہ آسیب کااثر کیوں نہ ہو۔ آسیب زدہ کیلئے کسی برتن پر اللّٰہ اس برتن کی گنجائش کے بقدر لکھ کر اس کا پانی آسیب زدہ پر چھڑکیں تو اس پر مسلط شیطان جل جاتاہے۔ جوشخص اللّٰہ کا محبت الہی کی وجہ سے ذکر کر ے گا اور شک نہیں کرے گا وہ صاحبِ یقین میں سے ہوگا۔ جوہر نماز کے بعد سات بار (ہُوَاللّٰہُ الرَّحِیْمُ ) پڑھتا رہے گا اس کا ایمان سلب نہیں ہوگا اور وہ شیطان کے شرسے محفوظ رہے گا۔ جوشخص ایک ہزار با (یَااللّٰہُ یَاہُوَ ) پڑھے گا اس کے دل میں ایمان اورمعرفت کو مضبوط کردیاجائے گا۔ جوشخص جمعہ کے دن عصر کی نماز پڑھ کرقبلہ رخ بیٹھ کر مغرب تک ( یَااَللّٰہُ یَارَحْمٰنُ یارَحِیْمُ ) پڑھتا رہے گا۔ پھر اللہ تعالی سے جو چیز مانگے گا اللہ تعالی اس کو عطا فرمائیں گے، الرَّحْمٰنُ (بے حد رحم کرنے والا) جوشخص روزانہ ہرنماز کے بعد سومرتبہ یَا رَحْمٰنُ پڑھے گا اس کے دل سے انشاء اللہ ہرقسم کی سختی اور غفلت دور ہوجائے گی ۔ اگر کوئی شخص اَلرَّحْمٰنُ الرَّحِیْمُ کولکھ کر اور دھوکر وہ پانی کسی درخت کی جڑمیں ڈال دے تو درخت کے پھل میں برکت ہو گی۔ اسی طرح طالب ومطلوب کانام مع والدہ کے لکھ کر باند ھے تو مطلوب اسکی محبت میں سرگر داں ہوجائے۔ اور اگر کسی کو گھو ل کر پلائے تواس کے دل میں طالب کی محبت ہو‘ بشر طیکہ محبت جائز ہو۔ اس اسم کو کثرت سے پڑھنے والا ہر امرِ مکروہ سے محفوظ رہتا ہے۔ اسےلکھ کراوردھوکرپلانے سے گرم بخار سے شفانصیب ہوتی ہے۔

Leave a Comment